menu icon

پنجاب میں وزارت اعلیٰ کا انتخاب، سپریم کورٹ سماعت کے دوران اہم ریمارکس

سپریم کورٹ میں پی ٹی آئی کی جانب سے پنجاب میں وزارت اعلیٰ کے انتخاب کے لیے دیے گئے لاہور ہائیکورٹ فیکصے کے خلاف دائر کی گئی درخواست کی سماعت
web desk dharti ویب ڈیسک


سپریم کورٹ میں پی ٹی آئی کی جانب سے پنجاب میں وزارت اعلیٰ کے انتخاب کے لیے دیے گئے لاہور ہائیکورٹ فیکصے کے خلاف دائر کی گئی درخواست کی سماعت جاری ہے۔

سماعت کے دوران پی ٹی آئی کے وکیل بابر اعوان نے موقف اختیار کیا کہ انہیں انتخابات کے لیے سات دن کا وقت چاہیے۔ جس پر عدالت نے ریمارکس دیے کہ آپ نے درخواست میں تو وقت کا تذکرہ ہی نہیں کیا۔

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں قائم تین رکنی بنچ نے سماعت کے دوران ریمارکس دیے کہ ممبر اگر موجود نہ ہوں تو انتظار کر کے ووٹنگ نہیں کروائی جا سکتی۔ سپریم کورٹ اس معاملے میں مداخلت کیوں کرے۔


جسٹس اعجاز الحسن نے ریمارکس دیے کہ ملک کے اندر موجود ارکان ایک دن میں ووٹنگ کے لیے پہنچ سکتے ہیں۔ آپ کیا چاہتے ہیں کہ پنجاب سات دن تک وزیر اعلیٰ کے بغیر رہے۔ ہائیکورٹ چاہتا ہے کہ صوبے میں حکومت قائم رہے۔ یہ نہیں ہو سکتا کہ سابق وزیر اعلی بحال ہوں۔

دریں اثناء سپریم کورٹ نے کیس کی مزید سماعت کے لیے وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز اور اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی کو عدالت میں طلب کر لیا۔ اور قرار دیا کہ چار بجے سے پہلے سماعت مکمل کریں گے۔

متعلقہ خبریں









مزید

کھیل

پنڈی ٹیسٹ کا دوسرا روز،انگلش ٹیم پہلی اننگز میں کتنے رنز بنائے.؟











تجارت

گوگل پلے اسٹور کی سروسز پاکستان میں بند ہونگی یا نہیں ؟ فیصلہ ہوگیا











دلچسپ

” میرا دل یہ پُکارے آجا ” مسٹربین بھی اسی بُخار میں مبتلا












وڈیوز

وڈیوز

افواجِ پاکستان کی قربانیوں پر قوم کے جذبات

وڈیوز

غربت اور بیماری میں بچوں کی پرورش کرتی باہمت خاتون

وڈیوز

ابھی نندن پرکلی کی مزاحیہ نظم


لاہور میں باپ کی بیٹی سے نکاح کی خواہش

فارن فنڈنگ کیس : خان صاحب انصاف کے لیے عوام میں نکل آئے

جشن آزادی پر محرم الحرام کے احترام میں کاروبار میں مندی کا رجحان

چیل گوشت کا صدقہ دینا حلال ہے یا حرام ؟

بجلی کے بل دیکھ کر عوام کی چیخیں نکل گئیں

محبت کی شادی کا خوفناک انجام


مزید دیکھیں