menu icon

میر جعفر، میر صادق، نیوٹرل اور جانور کہنا اس لیے ہے کہ آرمی چیف اور ان کے ادارے نے غیرقانونی کام کرنے سے انکار کیا

جنرل باجوہ کو مارچ میں آرمی چیف کے عہدے کی مدت میں غیرمعمولی توسیع کی پیشکش کی
web desk dharti ویب ڈیسک


ڈیلی دھرتی (ویب ڈیسک) تفصیلات کے مطابق پاکستان کی فوج کے ترجمان لیفیٹیننٹ جنرل بابر افتخار نے کہا ہے کہ ارشد شریف کی موت انتہائی اندوہناک واقعہ ہے اور اس پر سب کو دکھ ہے۔

آئی ایس آئی کے ڈائریکٹر جنرل لیفٹیننٹ جنرل ندیم انجم نے انکشاف کیا ہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کو رواں سال مارچ میں مدت ملازمت میں توسیع کی پیشکش کی گئی تھی لیکن انہوں نے اسے مسترد کر دیا،

  راولپنڈی میں آئی ایس پی آر کے ڈائریکٹر جنرل لیفٹیننٹ جنرل بابر افتخار کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آئی ایس آئی کے سربراہ نے انکشاف کیا کہ ’میں تاحیات اس پیشکش کا عینی شاہد ہوں کیونکہ یہ میری موجودگی میں کی گئی تھی لیکن آرمی چیف نے موقع پر ہی اسے مسترد کر دیا۔  “

آئی ایس آئی کے سربراہ نے کہا کہ وہ جانتے ہیں کہ صحافی انہیں اپنے درمیان دیکھ کر حیران ہیں لیکن ایسے وقت میں خاموش رہے جب ملک میں افراتفری اور انارکی کا خدشہ تھا، یہ اچھی بات نہیں۔

انہوں نے کہا کہ ان کی پالیسی واضح ہے کہ وہ کسی قسم کی تشہیر نہیں چاہتے۔  انہوں نے اپنے ادارے اور ملک کی مسلح افواج کے شہداء کا دفاع جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ مارچ 2022 میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کو غیر معینہ مدت کے لیے توسیع کی پیشکش کی گئی تھی۔

*ارشد شریف کے قتل پر ڈائریکٹر جنرل آئی ایس پی آر*

آئی ایس پی آر کے ڈائریکٹر جنرل لیفٹیننٹ جنرل بابر افتخار نے کہا ہے کہ ارشد شریف کا قتل ایک سانحہ ہے کیونکہ وہ پاکستان میں صحافت کے آئیکون تھے۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فوجی ترجمان کا کہنا تھا کہ ارشد شریف کی موت سے متعلق حقائق سامنے لانا ضروری تھا کیونکہ اداروں، اس کی قیادت اور آرمی چیف پر بے بنیاد الزامات لگائے گئے۔

اپنی پریس کانفرنس کے آغاز میں بابر افتخار نے کہا کہ آج کی میڈیا ٹاک کا مقصد کینیا میں صحافی ارشد شریف کے قتل اور اس کے اطراف کے حالات پر روشنی ڈالنا ہے۔

بابر افتخار نے کہا کہ یہ پریس کانفرنس حقائق کو پیش کرنے کے تناظر میں منعقد کی جا رہی ہے تاکہ “حقائق، افسانے اور رائے میں فرق کیا جا سکے”، انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعظم شہباز شریف کو نئی کانفرنس کی حساسیت کے بارے میں “خصوصی طور پر آگاہ” کر دیا گیا ہے۔

اس کے علاوہ ان عوامل کا تعین کرنا بھی ضروری تھا جن کی وجہ سے ایک مخصوص بیانیہ بنایا جا رہا تھا اور لوگوں کو گمراہ کیا جا رہا تھا، انہوں نے کہا کہ آرمی چیف کو بھی نشانہ بنایا گیا اور تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔  معاشرہ.”

آئی ایس پی آر کے سربراہ نے کہا کہ ارشد شریف کی موت ایک “افسوسناک واقعہ” ہے اور انہیں “پاکستان میں صحافت کا آئیکن” قرار دیا ہے۔  انہوں نے کہا کہ مرحوم صحافی کے خاندان کے افراد نے فوج میں خدمات انجام دیں، انہوں نے مزید کہا کہ وہ شہید اہلکاروں کا درد ہمیشہ محسوس کرتے ہیں۔

متعلقہ خبریں









مزید

کھیل

پرتگال کے کرسٹیانو رونالڈو نے ٹیم کو چھوڑ دیا؟











تجارت

ڈالر کو پر لگ گئے ، قیمت میں مزید اضافہ











دلچسپ

عمران خان سے محبت کا انوکھا انداز ، متوالے نے کتنے فِٹ لمبا بلا تیارکرلیا ؟












وڈیوز

وڈیوز

افواجِ پاکستان کی قربانیوں پر قوم کے جذبات

وڈیوز

غربت اور بیماری میں بچوں کی پرورش کرتی باہمت خاتون

وڈیوز

ابھی نندن پرکلی کی مزاحیہ نظم


لاہور میں باپ کی بیٹی سے نکاح کی خواہش

فارن فنڈنگ کیس : خان صاحب انصاف کے لیے عوام میں نکل آئے

جشن آزادی پر محرم الحرام کے احترام میں کاروبار میں مندی کا رجحان

چیل گوشت کا صدقہ دینا حلال ہے یا حرام ؟

بجلی کے بل دیکھ کر عوام کی چیخیں نکل گئیں

محبت کی شادی کا خوفناک انجام


مزید دیکھیں